6 December, 2016 21:12


NADEEM MALIK LIVE

www.samaa.tv/videos/NadeemMalik

06-DECEMBER-2016

مسلم لیگ ن چاہتی ہے کہ پاناما کا کیس سپریم کورٹ روزانہ کی بنیاد پر سنے۔ بیرسٹر ظفراللہ کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

ہمیں امید ہے کہ ہمارا وکیل ایک ہفتے میں اپنے دلائل ختم کر لے گا۔ بیرسٹر ظفراللہ

پاناما لیکس کا معاملہ سات آٹھ ماہ سے لٹکا ہوا ہے جلد ختم ہونا چاہئیے ساری کابینہ سپریم کورٹ میں آ کر بیٹھی رہتی ہے۔ شاہ محمود قریشی

نیا چیف جسٹس آنے سے معاملہ لٹک سکتا ہے بنچ ٹوٹ سکتا ہے کیس جلد ختم ہونا چاہئیے۔ شاہ محمود قریشی

پاناما لیکس کا معاملہ اوپن اینڈ شٹ کیس ہے کمشن بناے کی ضرورت نہیں ہے۔ شاہ محمود قریشی

ابھی تک سپریم کورٹ نے کمشن بنانے کی تاثر نہیں دیا ہے۔ کامران مرتضی

سپریم کورٹ کے موجودہ چیف جسٹس اپنا فیصلہ محفوظ بھی کر سکتے ہیں۔ کامران مرتضی

چیف جسٹس اپنی چھٹیاں منسوخ بھی کر سکتے ہیں کیونکہ ان کی ریٹائرمنٹ کے بعد موجودہ بنچ ٹوٹ سکتا ہے۔کامران مرتضی

سپریم کورٹ کا موجودہ بنچ ٹوٹ گیا تو کیس نئے سرے سے چلایا جا اسکتا ہے۔ کامران مرتضی

پاناما کا کیس سپریم کورٹ کے لئیے بہت مشکل کیس ہے جلد بازی میں فیصلہ نہیں دیا جانا چاہئیے۔ سعید غنی

آج عدالت کی طرف سے شریف خاندان سے پوچھے جانے والے تین سوالات کو بنیاد بنا کر پاناما کیس کا فیصلہ ہو سکتا ہے۔ سعید غنی

نصیر اللہ بابر اپنے دور میں پاناما کیس کی مکمل تحقیقات کر چکے ہیں تمام ثبوت موجود ہیں۔ سعید غنی

نصیر اللہ بابر شریف خاندان کے خلاف اس لئیے کاروائی نہیں کر پائے تھے کیونکہ شریف خاندان دو ججوں سے آرڈر لے آتا تھا اور کچھ نہیں ہو پاتا تھا۔ سعید غنی

رحمان ملک کی پاناما لیکس پر بنائی گئی رپورٹ پی ٹی آئی کی دستاویزات کا حصہ ہے اور اس میں زیرو ثبوت دئیے گئے ہیں۔ بیرسٹر ظفراللہ

پاناما کیس واحد مقدمہ ہے کہ جس میں مدعی ایک بھی ثبوت فراہم نہیں کر سکا۔ بیرسٹر ظفراللہ

مسلم لیگ ن بھی چاہتی ہے کہ پاناما کے کیس پر کمشن نہ بنے۔ بیرسٹر ظفراللہ

عمران خان نے کبھی اپنی آف شور کمپنی کو نہیں چھپایا اسے ہر جگہ ظاہر کیا ہے۔ شاہ محمود قریشی

نیب پاناما کا کیس سن لیتی تو یہ کیس آج عدالت میں نہ ہوتا۔ کامران مرتضی

نیب کا معاملہ مشکوک ہے دس دس سال پرانے کیس نیب کے پاس پڑے ہوئے ہیں۔ کامران مرتضی

نیب نے خود سپریم کورٹ کے سامنے ایک سو پچاس میگاکرپشن کے کیسز رکھے لیکن ایک سال گزر جانے کے باوجود نیب نے کوئی کاروائی نہیں کی ہے۔ سعید غنی

نیب کمزور کا احتساب کرتی ہے طاقتور کو ہاتھ نہیں ڈالتی۔ سعید غنی

یہ بات درست ہے کہ مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی نے نیب کو درست کرنے کے لئیے کچھ نہیں کیا ہے۔ بیرسٹر ظفراللہ

ہم چاہتے ہیں کہ تمام سیاسی جماعتیں اتفاق رائے سے احتساب کا ایک مظبوط قانون بنایں۔ بیرسٹر ظفراللہ

لوگوں کو ابھی تک یقین نہیں آتا کہ عدالت سے پاناما لیکس کا فیصلہ آئے گا۔ شاہ محمود ریشی

مریم نواز اپنا ٹیکس ادا کرتی ہیں وہ نواز شریف کی زیر کفالت نہیں ہیں۔ بیرسٹر ظفراللہ

شریف خاندان عوام اور پارلیمنٹ کے سامنے جھوٹ بولتا ہے لیکن عدالت کے سامنے احتیاط سے کام لیتا ہے۔ شاہ محمود قریشی

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s