25 January, 2017 21:12


NADEEM MALIK LIVE

www.samaa.tv/videos/NadeemMalik

25-JANUARY-2017

پاناما کیس میں اصل مسئلے کی طرف نہ جج آئے ہیں اور نہ وکلا آئے ہیں۔ آج کے واحد مہمان اعتزاز احسن کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

اصل مسئلہ یہ ہے کہ شریف خاندان لندن فلیٹس کی ملکیت مان چکا ہے اب انہوں نے منی ٹریل دینی ہے۔

قطری شہزادے کا خط منی ٹریل نہیں ہے بنک اکاؤنٹس کی تفصیلات دینی ہوں گی۔

شریف خاندان لندن فلیٹس کی ملکیت تسلیم نہ کرتا تو ثابت کرنا بہت مشکل ہوتا۔

اگر مریم نواز کے متعلق پاناما دستاویزات جعلی ہیں تو پھر وہ آئی سی آئی جے، جرمن اخبار اور بی بی سی کے خلاف مقدمہ کریں۔

شریف خاندان سے کہا جائے کہ لندن فلیٹس کی اصل دستاویزات پیش کریں۔

سپریم کورٹ شریف خاندان سے اتھارٹی ل؛یٹر لے اور اپنے نمائندے کے زریعے آف شور کمپنیوں کی دستاویزات منگوائے۔

اگر نواز شریف نیب کے سامنے پیش ہوتے تو ان کے ہاتھ کانپ رہے ہوتے۔

منی ٹریل یہ ہے کہ شریف خاندان انیس سو اٹھہتر سے اب تک کی ٹیکس کی دستاویزات پیش کرے۔

قانون کے مطابق اگر بیٹے کے تین گھر ہوں اور باپ پبلک آفس ہولڈر ہو تو وہ زمہ دار ہو گا۔

اگر شریف خاندان نے چھبیس سال قطری شہزادے کے ساتھ کاروبار کیا تھا تو اس کے ثبوت پیش کرے۔

وزیراعظم اگر پیپلز پارٹی کا ہوتا تو اب تک اسے گرفتار کر لیا گیا ہوتا۔

قطری شہزادے کا خط دو ہزار چھ میں نہیں بنا تھا یہ اب بنایا گیا ہے۔

حسین نواز سعودی عرب میں کام کرتا ہے وہاں ٹیکس قوانین نہیں ہیں اس لئے وہ پراپرٹی نام لگانے کے لئیے سب سےزیادہ موزوں شخص تھا۔

شریف خاندان سعودیوں سے خط لینا چاہتا تھا لیکن یمن کے مسئلے پر اختلافات ہو جانے کہ وجہ سے قطری شہزادے سے خط لیا گیا۔

جب تک قطری شہزادہ عدالت میں پیش نہ ہو اس کے خط کی کوئی حیثیت نہیں ہے۔

قطری شہزادے کا خط شریف خاندان کو کوئی فائدہ نہیں دے سکتا البتہ ان کے خلاف استعمال ہو سکتا ہے۔

سپریم کورٹ نے دو مرتبہ نواز شریف کو بچایا ہے۔

انیس سو ترانوے میں غلام اسحق نے نواز شریف کی حکومت کو کرپشن کے الزامات پر ختم کیا تو سپریم کورٹ نے کہا کہ کرپشن چارجز پر پوری حکومت کو ختم نہیں کیا جا سکتا۔

جب بینظیر کی حکومت تھی تو ان کی حکومت کو بھی کرپشن کے الزامات پر ختم کیا گیا اور سپریم کورٹ نے اسے مان لیا تھا۔

اگر سپریم کورٹ نے شریف خاندان سے منی ٹریل نہ مانگی تو یہ ایسے ہی ہو گا کہ پینلٹی ہٹ دے دی جائے اور کہا جائے کہ گول کیپر کھڑا نہیں ہو گا۔

ڈان نیوز والی میٹنگ میں آتھ لوگ تھے چھ سویلین اور دو فوجی تو یہ خبر لیک نہیں ہونی چاہئیے تھی۔

کشمیر کے مسئلے پر وزیراعظم کے ساتھ ہماری بند کمرے میں میٹنگ ہو رہی تھی اور باہر ہماری باتوں کے ٹکر چل رہے تھے۔

http://naeemmalik.wordpress.com/

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s