22 March, 2017 21:25


NADEEM MALIK LIVE

www.samaa.tv/videos/NadeemMalik

22-MARCH-2017

میں نے آج پارلیمنٹ میں اپنی تقریر میں کہا ہے کہ ملٹری کورٹس کو توسیع دینا ایک کڑوا گھونٹ تھا۔ شیری رحمان کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

ملٹری کورٹس کو اس لئیے توسیع دینی پڑی کیونکہ حکومت نے دہشت گردی کے خلاف قوانین کے جو ضروری اقدامات کرنے تھے وہ نہیں کئیے۔ شیری رحمان

ایک اچھی بات اس دفعہ یہ ہوئی ہے کہ دہشت گردی کے خلاف آپریشن کی نگرانی کے لئیے پارلیمنٹ کی ایک کمیٹی بنائی گئی ہے۔ شیری رحمان

ہمارے قانون میں اس وقت بھی فیسلیس کورٹس بنانے کی گنجائش موجود ہے۔ خرم دستگیر

حکومت نے صرف عدلیہ کو ہی نہیں پراسیکیوشن کو بھی تحفظ دینا ہے۔ خرم دستگیر

ایک بات واضع ہے کہ دہشت گردی کے ناسور کے خلاف ملک کی تمام قوتیں ایک صفحے پر ہیں۔ عرفان قادر

ملک کے تمام ادارے اگر دہشت گردی کے خلاف اپنی اپنی تجاویز دیں اور اپنی ناکامیوں کو تسلیم کر لیں تو یہ بہت اچھا ہو گا۔ عرفان قادر

پاکستان میں دہشت گردی کے خلاف اس وقت تین قسم کے بیانیہ چل رہے ہیں۔ شیری رحمان

ایک بیانیہ دہشت گردی کے بالکل خلاف ہے دوسرا کبھی خلاف اور کبھی نرم ہے اور تیسرا مختلف قسم کی توجیحات پیش کرتا رہتا ہے۔ شیری رحمان

فضل الرحمان اور محمود اچکزئی کے ملٹری کورٹس کے بارے میں مختلف خیالات ہیں اور وہ ان کا اظہار بھی کرتے رہے ہیں۔ خرم دستگیر

ملٹری کورٹس دہشت گردی کو ختم کرنے کا واحد راستہ نہیں ہیں یہ صرف ایک زریعہ ہیں۔ خرم دستگیر

دہشت گردی کو کرمنل کیس کے طور پر لینا چاہئیے اور عدلیہ کو رہنمائی کرنی چاہئیے کہ کس قسم کے قوانین بنائے جایں۔ خرم دستگیر

عدلیہ کی بھی تشکیل نو کرنے کی ضرورت ہے سابقہ حکومت کے دور میں عدلیہ کا جھکاؤ بہت زیادہ ایک جماعت کی طرف تھا۔ عرفان قادر

عدلیہ نے یوسف رضا گیلانی کو تو گھر بھیج دیا لیکن بعد میں اسی کیس میں راجہ پرویز اشرف کے خلاف کچھ نہ کر سکی۔ عرفان قادر

راجہ پرویز اشرف کے کیس میں عدلیہ کے ایک سینئیر جج نے مجھ کو درخواست کی کہ کسی طرح ان کی اس کسی سے جان چھڑائی جائے۔ عرفان قادر

عدلیہ قوانین میں تبدیلی پیپلز پارٹی، مسلم لیگ ن اور پی ٹی آئی کو اعتماد میں لے کر بنائے تا کہ بعد میں کوئی مسئلہ پیدا نہ ہو۔ عرفان قادر

پاناما کیس میں میں سمجھتا ہوں کہ عدلیہ کو ایک کمشن بنانا چاہئیے تا کہ تمام معاملات کی تفتیش ہو سکے۔ عرفان قادر

ایسا لگتا ہے کہ پاکستان میں احتساب کا قانون صرف پیپلز پارٹی کے لئیے بنا ہے۔ شیری رحمان

ہمارے مزہبی امور کے وزیر کاظمی صاحب کو ایک خط اور چند حاجیوں کی شکایت پر سولہ سال کی سزا دی گئی لیکن اب بری کر دیا گیا ہے۔ شیری رحمان

دنیا تنگ ہوتی جا رہی ہے ہر جگہ دہشت گردی کے واقعات ہو رہے ہیں۔ شیری رحمان

ڈو مور کہنے والے اور افغانستان جو کہتا ہے کہ پاکستان اپنے ملک میں دہشت گردوں کی زمہ داری لے کو سمجھنا چاہئیے کہ دہشت گردی کے خلاف سب کو ملنا ہو گا۔ شیری رحمان

میں شیری رحمان سے متفق ہوں دہشت گردی کے ناسور کے خلاف سب کو مل کر لڑنا ہو گا۔ عرفان قادر

http://naeemmalik.wordpress.com/

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s