27 July, 2017 22:05


NADEEM MALIK LIVE

www.samaa.tv/videos/NadeemMalik

27-JULY-2017

پاناما کیس کا فیصلہ کرنے کے لئیے پانچ ججوں کا بیٹھنا بہت مناسب بات ہے۔ اعتزاز احسن کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

دو جج اپنا فیصلہ دے چکے ہوئے ہیں ایک کیس میں دو فیصلے نہیں ہو سکتے کل عدالت اپنا حتمی فیصلہ دے گی۔

دو ججوں کا وزیراعظم کو نا اہل قرار دینے کا فیصلہ حتمی ہے اس پر نظر ثانی نہیں ہو سکتی۔

پاناما کا فیصلہ قانون اور آئین کے مطابق آنا چاہئیے اور اس کے مطابق نواز شریف بچ نہیں سکتے۔

دستاویزات میں جعلسازی شریف خاندان کے خلاف سب سے زیادہ سیریس کیس ہے۔

کیلبری فونٹ کا استعمال، طارق شفیع کی دستاویزات کا نوٹرائزڈ نہ ہونا اور ظفر حجازی کا دستاویزات کی ٹمپرنگ کرنا بہت ٹھوس کیسز ہیں۔

پی ٹی آئی کی شیریں مزاری نے کہا کہ

نواز شریف کے خلاف پاناما کے علاوہ بھی بہت سی چیزیں سامنے آ گئی ہیں ان کا بچنا بہت مشکل ہے۔

یہ بات واضع تھی کہ سپریم کورٹ کے پانچوں جج فیصلہ دیں گے۔

ایک شخص پر کرپشن کے چارجز ہیں اس کے خلاف سپریم کورٹ کا فیصلہ جمہوریت کے خلاف نہیں ہے۔

ہم کہتے ہیں کہ جس نے بھی غلطی کی ہے اسے پکڑیں چاہے وہ جہانگیر ترین ہی کیوں نہ ہو۔

بجائے اس کے کہ چوہدری نثار قوم کو بتایں کہ ملک کو بہت خطرہ ہے یہ بتایں کہ انہوں نے اس کے لئیے کیا کیا ہے۔

مجھے امید ہے کہ فیصلہ نواز شریف کے خلاف آئے گا اور وہ جیل جائے گا۔

مسلم لیگ ن کے مفتاح اسماعیل نے کہا کہ

مسلم لیگ ن ایک میچور جماعت ہے عدالت کا جو بھی فیصلہ آئے گا وہ اس کے لئیے تیار ہے۔

سپریم کورٹ کا فیصلہ آنے کے بعد دیکھیں گے کہ ریویو میں جانا ہے یا نہیں۔

ہم سپریم کورٹ کے فیصلے کو من و عن مانیں گے۔

سپریم کورٹ کا فیصلہ ٹھیک ہوتا ہےلیکن ہوتا جمہوریت کے خلاف ہے۔

پاناما کیس کے پیچھے فوج کا کوئی رول نہیں ہے۔

جہانگیر ترین کو بھی اس کے بیٹے نے اربوں روپے کے گفٹ دئیے ہیں۔

پی ٹی آئی کے بابر اعوان نے کہا کہ

میں دس میں سے دس نمبر دیتا ہوں کہ فیصلہ نواز شریف کے خلاف آئے گا۔

پنتالیس فیصد فیصلہ نواز شریف کے خلاف آ چکا ہے پچپن فیصد آنا باقی ہے۔

جنرل ریٹائرڈ غلام مصطفی نے کہا کہ

چوہدری نثار کی یہ بات بالکل درست ہے کہ اس وقت پاکستان کو شددید خطرہ ہے۔

بھارت پاکستان کو نقصان پہنچانے کی ہر ممکن کوشش کر رہا ہے۔

بھارت کو سی پیک کا منصوبہ پسن نہیں ہے۔

امریکہ نے داعیش کو پیدا کر کے پاکستان کے خلاف افغانستان میں بٹھا رکھا ہے۔

حکومت نے ملک کے اندر داعیش کے حمایتیوں کو ختم کرنے کے لئیے کچھ نہیں کیا۔

جسٹس ریٹائرڈ ناصرہ اقبال نے کہا کہ

جج قانون کے مطابق بہترین فیصلہ کریں گے انہیں معلوم ہے کہ قوم کو کس چیز کی ضرورت ہے۔

تین جج نواز شریف کو نا اہل قرار دینے والے دو ججوں کو ساتھ ملا کر فیصلہ دیں گے۔

http://naeemmalik.wordpress.com/

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s