2 August, 2017 23:01


NADEEM MALIK LIVE

www.samaa.tv/videos/NadeemMalik

02-AUGUST-2017

نوے کی دہائی میں جو حکومت سے جاتا تھا وہ کوشش کرتا تھا کہ وہ جی ایچ کیو یا کسی اور غیر آئینی طریقے جو پاور میں ہے اسے نیچے لائے۔ اسد عمر کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

آج ہمارا مقابلہ جمہوریت کے جو ستون ہیں ان میں ہو رہا ہے ان میں پارلیمنٹ عدالت اور میڈیا شامل ہے۔

نواز شریف گئے تو شاہد خاقان عباسی کو مسلم لیگ ن نے اپنا وزیراعظم منتخب کر لیا کیونکہ ان کی اکثریت ہے یہ جمہوری کے لئیے مثبت بات ہے۔

میں نواز شریف کی سیاسی پالیسی اور بھارت کے متعلق پالیسی کا شدید ناقد ہوں لیکن میں یہ نہیں کہتا کہ وہ ملک دشمن ہیں۔

جب سے نواز شریف گئے ہیں بھارتی اخبارات کہہ رہے ہیں کہیں نواز شریف کے جانے سے پاکستان کی پالیسی نہ بدل جائے۔

میں نواز شریف کو غدار نہیں کہتا لیکن وہ بھارت کے متعلق کمپرومائزڈ ہیں۔

گلا لئی خود کو پختون کہتی ہیں انہیں پی ٹی آئی کی پختون خواتین نے زبردست جواب دے دیا ہے۔

یہ بات بالکل واضع ہے کہ مسلم لیگ ن نواز شریف اور امیر مقام انیس سو نوے والی سیاست کر رہے ہیں۔

ماضی میں نواز شریف نے بیگم نصرت بھٹو کی تصویر ایڈٹ کروا کے ہیلی کاپٹر کے زریعے پھنکوائی تھی۔

مجھے سپریم کورٹ کے نیب پر اپنا جج بتھانے پر زرہ بھی حیرت نہیں ہوئی وہ کہہ چکی ہے کہ نیب فوت ہو چکی ہے۔

شاہد خاقان عباسی کے لئیے سب سے بڑا چیلنج یہ ہو گا کہ کیا وہ واقعی وزیراعظم ہوں گے یا نہیں۔

مسلم لیگ نے مفتاح اسماعیل نے کہا کہ

پی ٹی آئی کے لیڈرز ٹوئیٹر پر مسلم لیگ ن کے لیڈروں کی حب الوطنی کو چیلنج کر رہے ہوتے تھے۔

نواز شریف کے خلاف سپریم کورٹ کے فیصلے کی ماضی میں کوئی نظیر نہیں ملتی۔

سپریم کورٹ کے جج کا نیب کے جج کی نگرانی کرنا میرے خیال میں تھوڑی ٹھیک بات نہیں ہے۔

پیپلز پارٹی کی شہلا رضا نے کہا کہ

نواز شریف کے خلاف سپریم کے فیصلے پر آئینی ماہرین سوالات اٹھا رہے ہیں۔

مجھے عائشہ گلا لئی کا الزام اچھا نہیں لگا اس کی تحقیات ہونی چاہئیے۔

عورت کی طرح مرد کی بھی عزت ہوتی ہے عمران خان کو گلالئی کو نوٹس دینا چاہئیے۔

میں گلا لئی سے کہوں گی کہ اگر انہوں نے عمران خان پر الزام لگایا ہے تو پھر اسے ثابت بھی کریں۔

http://naeemmalik.wordpress.com/

Advertisements

2 August, 2017 12:34


NADEEM MALIK LIVE

www.samaa.tv/videos/NadeemMalik

01-AUGUST-2017

میں پیپلز پارٹی میں تھی وہاں میں نے خواتین کے لئیے بہت عزت دیکھی میں پی ٹی آئی میں آئی اور یہاں میں نے ایک اور طرح کا ماحول دیکھا۔ عائشہ گلالئی کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

عمران خان ایک کریکٹر لیس پرسن ہیں اور وہ غیر مناسب قسم کے ٹیکسٹ میسیجز بھیجتے ہیں۔

عمران خان خواتین کو میسیجز کرتے ہیں مجھے بھی میسیجز آئے جس سے مجھے زہنی صدمے سے گزرنا پڑا۔

میں نے عمران خان سے این اے ون کی ٹکٹ کے لئیے ایک جنرل بات کی تھی۔

عمران خان نے مجھے کیا میسیجز کئیے یہ میں اپنی پریس کانفرنس میں بتاؤں گی۔

عمران خان کے علاوہ ان کے ارد گرد کے لوگ بھی غیر مناسب میسیجز بھیجتے ہیں۔

پیپلز پارٹی کی ناز بلوچ نے کہا کہ

جب تک میں پی ٹی آئی میں تھی کبھی کسی نے مجھے غیر منساب میسیج نہیں بھیجا۔

عمران خان نے مجھے ہمیشہ عزت دی اور دوسرے مرد حضرات سے کبھی کوئی غلط بات نہیں سنی۔

میں نے پی ٹی آئی کو پارٹی معاملات میں اختلافات کی وجہ سے چھوڑا۔

میں آج بھی عمران خان کی بہت عزت کرتی ہوں۔

پیپلز پارٹی کی شیری رحمان نے کہا کہ

پی ٹی آئی کی لیڈر شپ پر لگنے والے الزامات بہت سیریس قسم کے ہیں انہیں اس کی وضاحت کرنی چاہئیے۔

خواتین کہہ رہی ہیں کہ پی ٹی آئی میں انہیں اہمیت نہیں دی جاتی تھی۔

پی ٹی آئی کی ملائکہ رضا نے کہا کہ

مجھے پی ٹی آئی میں کبھی کسی نے غیر مناسب میسیج نہیں بھیجا

پی ٹی آئی میں خواتین ورکرز کو کوئی اہمیت نہیں دی جاتی۔

ہمیں پی ٹی آئی سے سیاسی ورکر کی حٰثیت میں شکایات ہیں اور کوئی شکایت نہیں ہے۔

گلالہ لئی کو عمران خان کے خلاف غیر مناست میسیجز بھیجنے کا الزام نہیں لگانا چاہئیے تھا۔

مسلم لیگ نے کا رانا ثنا اللہ نے کہا کہ
میرا خیال ہے کہ عمران خان کا سپریم کورٹ کے ججوں سے رابطہ تھا اور یہ بات اس سے بھی آگے جائے گی۔

پاناما کیس ایک فکس میچ تھا آج تک ججوں نے اس کیس کی طرح کا فیصلہ نہیں لکھا۔

میرا زاتی خیال ہے کہ پنجاب میں جو ترقیاتی کام ہو رہا ہے اسے نہیں چھیڑنا چاہئیے شہباز شریف کو وزیراعلی ہی رہنا چائیے باقی پارٹی فیصلہ کرے گی۔

پی ٹی آئی کے شفقت محمود نے کہا کہ

کل تک گلالہ لئی پی ٹی آئی کے ٹکٹ کے لئیے درخواست کر رہی تھیں اور شکایت کر رہی تھیں کہ انہیں یوم تشکر کے جلسے میں تقریر کرنے کا موقع نہیں دیا گیا۔

ہمیں اطلاعات مل رہی تھیں کہ مسلم لیگ ن پی ٹی آئی کے خلاف ایک نئی قسم کی مہم شروع کرنے جا رہی ہے۔

ہم بھی مسلم لیگ ن کے متعلق بہت سی باتیں بتا سکتے ہیں لیکن ہم ایسا نہیں کریں گے بات سیاست تک رہنی چاہئیے۔

میں اس بات کی سختی کے ساتھ تردید کرتا ہوں کہ پی ٹی آئی خوتین ورکرز کو غیر مناسب میسیجز بھیجتی ہے۔

رانا ثنا اللہ کہہ رہے ہیں کہ سپریم کورٹ پی ٹی آئی کے ساتھ ملی ہوئی تھی جو بہت افسوسناک بات ہے۔

لگتا ہے کہ رانا ثنا اللہ اور ملسم لیگ ن کے ورکروں کو نئی ہدایات دی گئی ہیں۔

http://naeemmalik.wordpress.com/