22 August, 2017 22:14


NADEEM MALIK LIVE

www.samaa.tv/videos/NadeemMalik

22-AUGUST-2017

سی پیک کے بعد ٹرمپ نے آج جو کچھ کیا وہ ہونا تھا وہ چاہتا ہے کہ پاکستان تقسیم ہو جائے اور کمزور کرنا چاہتا ہے۔نہال ہاشمی کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

پاکستان میں ادارے ریاست سے زیادہ مظبوط ہو گئے ہیں۔

بڑے دنوں سے بات ہو رہی ہے کہ بیرونی سازش ہو رہی ہے اور آلہ کار پاکستان میں بیٹھے ہوئے ہیں۔

ایسے بھی ادارے ہیں جو کہتے ہیں کہ وہ نعوز باللہ اللہ سے زیادہ طاقتور ہیں ان سے ڈرو ورنہ وہ کچھ بھی کر سکتے ہیں۔

ان اداروں کو میں پیغام دیتا ہوں کہ ہم اللہ سے ڈرتے ہیں اور ایک قوم ہیں۔

جب ملک کو تقسیم کر دیا جائے تو وہ کمزور ہو جاتا ہے اور پھر لوگ دھمکیاں دیتے ہیں۔

میڈیا کے ایسے اینکر ہیں آپ فیس بک پر ان کے خطابات دیکھیں۔

جب نواز شریف امریکہ کی افغانستان پر پالیسی پر اپنی رائے دینا چاہتے تھے تو لوگ انہیں نہیں دینے دیتے تھے۔

پاکستان سب کا ہے ایک چپڑاسی کا بھی ہے لوگوں کو زندہ رہنے دو۔

کچھ لوگ دیوار نہیں پڑھ رہے لیکن میں پڑھ رہا ہوں۔

پیپلز پارٹی کے مرتضی نے کہا کہ

ڈونلڈ ٹرمپ کے بیان کو بارہ چودہ گھنٹے ہو گئے لیکن ابھی تک ہماری حکومت کا کوئی جواب نہیں آیا۔

دہشت گردی کے خلاف ہماری قوم اور فوج نے بے پناہ قربانیاں دی ہیں اور ہمیں ہی کہہ رہے ہیں کہ ہم نے کیا کیا۔

ہمیں دنیا سے پوچھنا چاہئیے کہ اس نے دہشت گردی کے خلاف کیا کیا ہے۔

اگر باسٹھ تریسٹھ کو بدلنے کی ضرورت ہے تو قانون سازی پارلیمنٹیرینز نے کرنی ہے۔

پیپلز پارٹی نے کہا تھا کہ آئین میں صادق اور امین کی توجیح نہیں ہے اسے ختم کر دیا جائے۔

محسن نواز رانجھا کا جسٹس کھوسہ کا نام لینا غلط بات ہے فیصلہ سپریم کورٹ نے دیا تھا۔

جنرل ریٹائرڈ امجد شعیب نے کہا کہ

دو قسم کے رد عمل ہوتے ہیں ایک فوری اور ایک پالیسی ہوتی ہے۔

فارن آفس کو امریکہ کی افغان پالیسی کے متعلق ایران اور چین سے رابطہ کرنا چاہئیے تھا انہیں پتہ تھا کہ پاکستان کے خلاف یہ پالیسی آ رہی ہے۔

میں باسٹھ تریسٹھ کو آئین سے نکالنے کے خلاف ہوں یہ تو کھلی چھٹی دینے والی بات ہے۔

جب تک کسی کے خلاف کوئی غلط چیز ثابت نہیں ہوتی وہ صادق اور امین ہے۔

حکومت مشرف کے خلاف حکومت ختم کرنے کا کیس کرنا چاہتی تو ہو جاتا لیکن نہیں کیا گیا۔

جنرل راحیل شریف نے مشرف کی جان بچانے میں کوئی کردار ادا نہیں کیا لیکن مشرف کہتا ہے کہ کیا ہے۔

میری رائے میں صادق اور امین کی وضاحت کر دینی چاہئیے اسے ختم نہیں کرنا چاہئیے۔

مسلم لیگ نے محسن نواز رانجھا نے کہا کہ

ڈونلڈ ٹرمپ کے بیان کے جواب میں حکومت کا پالیسی بیان کل تک آ جائے گا۔

پاکستان اور امریکہ کے درمیان اعتماد کا فقدان ہے اگر پاکستان نے اپنی زمہ داریاں پوری نہیں کیں تو امریکہ نے بھی نہیں کیں۔

ہمارے خطے میں تبدیلی آ رہی ہے سی پیک امریکہ خطے کے کچھ ممالک اور مغربی ملکوں کو پسند نہیں آ رہا ہے۔

باسٹھ تریسٹھ صرف سیاست دانوں پر نہیں انصاف فراہم کرنے والے تمام لوگوں پر لگنا چاہئیے۔

جسٹس کھوسہ نے فیصلے میں خود لکھا ہے کہ باسٹھ تریسٹھ پر پیغمبروں کے علاوہ کوئی پورا نہیں اتر سکتا۔

http://naeemmalik.wordpress.com/

Advertisements

22 August, 2017 14:30


NML-AUG21-640x381-280x170.jpg
https://www.youtube.com/watch?v=W-xlaiXWmeI&t=1012s

https://www.samaa.tv/videos/nadeemmalik/2017/08/nadeem-malik-live-samaa-tv-21-aug-2017/

http://siasatkorner.com/threads/nadeem-malik-live-psp-aur-mqm-mein-rabte-21st-august-2017.383058/

http://www.pakistanherald.com/program/44997/21-august-2017/nadeem-malik-live-beginning-of-new-era(col)-mqm

NADEEM MALIK LIVE

www.samaa.tv/videos/NadeemMalik

21-AUGUST-2017

TOPIC- LAWERS TUMULTUOUS & SPEAKER REFERENCE AGAINST THE JUDGE

GUESTS- SHAZIA MARI, ARIF ALVI, RANA AFZAL, FAROGH NASEEM, DR SAGHIR, KHALID MAQBOOL SIDDIQI

SHAZIA MARI OF PPPP said that it is lamenting that today’s Lahore lawyers tumult caused lot of trouble and school children were also affected by the use of tear gas. She said that Nawaz Sharif attitude is no different he attacked on the SC in the past and committed contempt of court many times on the way of his rally. She said that if Nawaz Sharif will not accept the decision of the SC the people will do what happened in Lahore today. She said that Khursheed Shah said that he always told former PM that he has is getting ill advice from the people around him and they will be pernicious to him. She said that the reference against the judge was prepared and then was taken back and it was done on the ill advice as well. She said that what is happening right now is diverting the country towards conflict legal matters should be dealt legally. She said that if the reference against the judge was prepared then the government should have been steadfast and had not taken it back. She said that Nawaz Sharif caused lot of trouble during the government of PPPP but there was no political prisoner during that time. She said that PPPP government also dealt with the dharna of Tahir Ul Qadri very wisely.

ARIF ALVI OF PTI said that lawyers from Multan told him that the government encouragement was also part of the pandemonium of the lawyers. He said the lawyers responsible for uproar should be arrested by recognizing from the video of the commotion. He said that he believes that a fake reference against the judge was prepared and then was intentionally leaked. He said that the speaker is bias in regard of reference he sent a reference against Imran Khan but not Nawaz Sharif. He said that speaker complaint is not like of any common man he represents an institution. He said that what is going on is undemocratic diverting the country to conflict to pretend as innocent.

He said that if MQM quits bloodshed and extortion there should be room for them to do the politics in Pakistan. He said that MQM voted for PM election in the favor of the government and they announced the package for the city in reciprocal. He said that he believes that all the groups of MQM are still under the authority of London office.

RANA AFZAL OF PML-N said that lawyers have beaten up judges many times after closing the doors of the court but judiciary has never taken any action against them. He said that if the judges had ordered to arrest the lawyers the government was going to get the license to apprehend them. He said that judiciary weakness is also responsible what happened today besides the government incompetence.

He said that the people opinion is that Nawaz Sharif is not ousted on solid reasons against him. He said that judiciary and the military both made mistake by sending their representatives for JIT.

FAROGH NASEEM OF MQM said that bar council is in the hands of PML-N lawyers and they do not represent ninety eight percent of the lawyer’s fraternity. He said that if a reference is filed against Justice Asif Saeed Khosa lawyers will protest against it very strongly.

KHALID MAQBOOL SIDDIQI OF MQM PAKISTAN said that his party has tried to contact all the political parties leaving the differences behind. He said that if Afaq Ahmed will show his interest his party will welcome it.

DR SAGHEER OF PSP said that MQM Pakistan contacted them and his party said that if you will do the politics of Pakistan his party will support them. He said that we all have made political mistakes. He said that we should condemn the torching of the national flag strongly.

http://naeemmalik.wordpress.com/

22 August, 2017 10:36


NADEEM MALIK LIVE

www.samaa.tv/videos/NadeemMalik

21-AUGUST-2017

مجھے بہت افسوس ہے کہ آج لاہور کے واقع سے بہت افراتفری ہوئی اور اس میں سکول کے بچے بھی پھنسے ہوئے تھے۔شازیہ مری کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

ہنگامے میں استعمال ہونی والی آنسو گیس کا اثر بچوں نے بھی محسوس کیا۔

نواز شریف کا اپنا رویہ بھی یہی رہا ماضی میں سپریم کورٹ پر حملہ کیا اور ریلی کے دوران عدالت کی کئی بار توہین کی گئی۔

اگر نواز شریف کہتے ہیں کہ انہیں کیوں نکالا اور ریلی نکالتے ہیں تو پھر عوام بھی وہی کریں گے جو کچھ آج لاہور میں ہوا ہے۔

خورشید شاہ نے کہا ہے کہ وہ ہمیشہ سابق وزیراعظم کو مشورہ دیتے تھے کہ آپ کے ارد گرد آستین کے سانپ ہیں وہی آپ کو ڈبویں گے۔

جج کے خلاف ریفرنس کی بھی تیاری کی گئی لیکن پھر واپس لے لیا گیا یہ بھی ایڈوائزرز کے مشورے سے ہی کیا گیا۔

جو کچھ ہو رہا ہے یہ سب کچھ تصادم کی طرف جا رہا ہے قانون کا مقابلہ قانون سے کرنا چاہئیے۔

اگر جج کے خلاف ریفرنس تیار کیا گیا تھا تو پھر اس پر ڈٹے رہتے پیچھے نہیں ہٹتے۔

پیپلز پارٹی کے دور میں نواز شریف نے حکومت کے خلاف بہت کچھ کیا لیکن ایک بھی سیاسی قیدی نہیں تھا۔

ہم نے اپنے دور میں طاہرالقادری کے دھرنے کو بھی بہت اچھے طریقے سے ہینڈل کیا تھا۔

پی ٹی آئی کے عارف علوی نے کہا کہ

مجھے ملتان کے وکلا نے بتایا ہے کہ آج جو کچھ ہوا اس میں حکومت کی طرف سے حوصلہ افزائی بھی شامل ہے۔

وڈیو سے پہچان کو جو وکلا ہنگامے میں ملوث ہیں انہیں گرفتار کیا جانا چاہئیے۔

میرا خٰال ہے کہ جج کے خلاف جعلی ریفرنس تیار کیا گیا اور پھر اسے لیک کیا گیا۔

سپیکر صاحب ریفرنس کے معاملے میں جانبدار رہے ہیں انہوں نے عمران خان کے خلاف ریفرنس بھیج دیا تھا لیکن نواز شریف کے خلاف نہیں بھیجا تھا۔

سپیکر کی شکایت عام آدمی کی شکایت نہیں ہے وہ ایک ادارے کی نمائندگی کرتا ہے۔

جو کچھ ہو رہا ہے غیر جمہوری ہے اور تصادم کی طرف جا رہا ہے تا کہ مظلوم بن سکے۔

ایم کیو ایم اگر قتل و غارت اور بھتہ خوری چھوڑ دے تو پھر ان کی پاکستان کی سیاست میں جگہ ہونی چائیے۔

ایم کیو ایم نے وزیراعظم کے لئیے حکوم،ت کو ووٹ دیا تو اس کے بدلے کراچی پیکیج دے دیا گیا ہے۔

میں سمجھتا ہوں کہ ایم کیو ایم کے تمام گروپس آج بھی لندن کے آفس کے تحت ہیں۔

مسلم لیگ ن کے رانا افضل نے کہا کہ

وکلا نے کئی بار کمرے کی کنڈی لگا کر ججوں کی ٹھکائی بھی کی ہے لیکن جیوڈیشری نے کبھی ان کے خلاف کاروائی نہیں کی ہے۔

جج کہہ دیتے کہ ہنگامہ کرنے والے وکلا کے خلاف پرچہ دے دو تو حکومت کے پاس انہیں گرفتار کرنے کا لائسنس آ جاتا۔

آج جو کچھ ہوا اس میں جہاں حکومت کی کمزری ہے وہاں جیوڈیشری کی اپنی بھی کمزوری ہے۔

عوام کی رائے ہے کہ نواز شریف کو ایک غیر مستحکم وجہ کی وجہ سے نکالا گیا ہے۔

پاناما کیس میں جیوڈیشری اور فوج دونوں سے غلطی ہوئی انہوں نے اپنے نمائیندے کیوں بھیجے۔

ایم کیو ایم کے فروغ نسیم نے کہا کہ

اس وقت بار کونسل مسلم لیگ ن کے وکلا کے ہاتھ میں ہے اور وہ ملک کے اٹھانوے فیصد وکلا کی نمائینگی نہیں کرتے۔

اگر جسٹس آصف سعید کھوسہ کے خلاف کوئی ریفرنس دائر کیا گیا تو ہم اس کی بھر پور مزمت کریں گے۔

ایم کیو ایم پاکستان کے خالد مقبول صدیقی نے کہا کہ

ہم نے کوشش کی ہے کہ سیاسی اختلافات سے بالا تر ہو کر تمام سیاسی جماعتوں سے رابطہ کیاجائے۔

اگر آفاق احمد دلچسپی کا مظاہرہ کریں تو ان سے بھی بات چیت ہو سکتی ہے۔

پی ایس پی کے ڈاکٹر صغیر نے کہا کہ

ایم کیو ایم پاکستان والے ہمارے پاس آئے تھے ہم نے کہا کہ اگر آپ پاکستان کی بات کریں گے تو ہم آپ کے ساتھ ہیں۔

سیاست میں سب نے غلطیاں کی ہیں۔

پرچم جلانے کے واقع کی کھل کر مزمت کی جانی چائیے۔

http://naeemmalik.wordpress.com/