15 January, 2018 20:55


NADEEM MALIK LIVE

www.samaa.tv/videos/NadeemMalik

15-JANUARY-2018

زینب کا کیس ایک سیریل کلر یا سیریل ریپسٹ کا لگ رہا ہے لیکن اس کا مطلب یہ نہیں کہ اسے پکڑا نہ جا سکے۔ ڈاکٹر مصدق ملک کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

حکومت مجرم کو پکڑنے کی پوری کوشش کر رہی ہے اور جلد اسے گرفتار کر لے گی۔

طاہرالقادری کینیڈا سے آتے ہیں سب کو پتہ ہے کہ وہ کیوں آتے ہیں اور کس کے اشارے پر آتے ہیں۔

سانحہ ماڈل ٹاؤن میں جن لوگوں پر مقدمہ ہے ان میں سے آٹھ بندے جیل میں ہیں۔

سانحہ ماؔڈل ٹاؤن میں گولی چلانے کا حکم پولیس نے دیا تھا۔

پی ٹی آئی نے مشرف کے ریفرنڈم کی مہم چلائی تھی۔

پیپلز پارٹی کے نبیل گبول نے کہا کہ

ہم سانحہ ماڈل ٹٓاؤن کے مسئلے پر طاہرالقادری کے ساتھ کھڑے ہوں گے اور حکومت مزاحمت نہیں کر پائے گی۔

ہم حکومت کے خلاف تحریک چلایں گے تو مزہبی جماعتیں بھی ہمارا ساتھ دیں گی۔

ہم لاہور کو بند کر دیں گے۔

حکومت کہہ رہی ہے کہ انہوں نے زینب کے پورے محلے کا ڈی این اے ٹیسٹ کروایا ہے یہ بات کسی مسئلے کا حل نہیں ہے۔

کل کراچی میں بھی پولیس نے ایک نوجوان کو مار دیا ہے۔

طاہرالقادری کا ایک ہی کنٹینر نکلے گا اور ان کا ساتھ دینے والے اسی کنٹینر پر کھڑے ہوں گے۔

عمران خان اگر زرداری کے ساتھ کھڑا نہیں ہونا چاہتے تو پھر انہیں اپنا الگ کنٹینر لانا پڑے گا۔

حکومت کو اس وقت حدیبیہ پیپر مل کیس دوبارہ شروع ہونے اور بلوچستان حکومت ختم ہونے کی پریشانی لگی ہوئی ہے۔

بلوچستان کی حکومت کرپشن کی بنیاد پر ختم کی گئی لیکن وزیراعظم اور احسن اقبال فوج کو الزام دے رہے ہیں۔

پی ٹی آئی کے عمران اسماعیل نے کہا کہ

سترہ تاریخ کو ایک دن کا احتجاج ہو گا اور شہباز شریف پر استعفی دینے کے لئیےدباؤ بؔڑھایا جائے گا۔

پنجاب پولیس لوگوں کو گولیاں مارتی ہے اور یہ نہیں پتہ ہوتا کہ حکم کس نے دیا تھا یہ سٹیٹ ٹیررازم ہے۔

سانحہ ماڈل ٹاؤن کو چار سال ہو گئے زینب کو اغوا ہونے کے پانچ دن بعد تک ڈھونڈھا نہیں گیا جب تک احتجاج نہ ہو حکومت کو کوئی اثر نہیں ہوتا۔

پرویز رشید اور مسلم لیگ ن ایک ایسا پاکستان چاہتے ہیں جس میں ملٹری نہ ہو۔

مسلم لیگ ن پاکستان کی آرمی کو اس طرح للکارتی ہے جیسے وہ بھارت کی فوج ہو۔

پاکستان عوامی تحریک کے طاہرالقادری نے کہا کہ

سترہ کو ہمارا احتجاج شروع ہو رہا ہے یہ ایک دن کا ہے لیکن یہ دھرنے میں تبدیل ہو سکتا ہے۔

دھرنے کا فیصلہ ہم اپنے کل والے اجلاس میں کریں گے ہمارا احتجاج مال روڈ پر ہو گا۔

ہم سترہ تاریخ کو احتجاج کریں گے اور اگلے قدم کا اعلان وہیں کر دیں گے۔

ہمارے احتجاج کا آخری نتیجہ یہ نکلے گا کہ پنجاب حکومت نہیں رہے گی۔

سترہ تاریخ کے احتجاج میں زرداری اور عمران خان دونوں تقریر کریں گے۔

عمران خان اور زرداری کو سٹیج پر اکٹھا کرنا ہمارا مقصد نہیں ہے ہمارا ون پوائنٹ ایجنڈا ہے اور وہ ماڈل ٹاؤن ہے۔

ہمارا احتجاج آئین قانون اور امن کے اندر رہتے ہوئے ہو گا۔

http://naeemmalik.wordpress.com/

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s