12 March, 2018 21:00


NADEEM MALIK LIVE

www.samaa.tv/videos/NadeemMalik

12-MARCH-2018

پیپلز پارٹی ایک تختہ مشق ہے یہ کچھ بھی نہ کرے تو الزام لگا دیا جاتا ہے۔آج کے واحد مہمان اعتزاز احسن کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

مسلم لیگ ن تو گنگا نہائی ہوئی ہے۔

صادق سنجرانی ایک ہارڈ کور بلوچ ہے اس کا جیتنا بہت خوش آئند ہے۔

میرا خیال ہے کہ ملسم لیگ ن کے لوگوں نے صادق سنجرانی کو ووٹ دئیے ہیں۔

پہلی مرتبہ چھوٹے صوبے سے چیرمین سینٹ منتخب ہوا ہے۔

حاصل بزنجو جیسا بیان دینے والے اور لوگ بھی مل جایں گے جو ہارے گا وہ ان جیسی ہی باتیں کرے گا۔

سیکریٹ ووٹنگ ہوئی ہے کوئی کیسے بتا سکتا ہے کہ کس کا ووٹ ہے۔

راجہ ظفرالحق ضیا الحق کے اوپننگ بیٹسمین تھے۔

اس وقت ایک ایسی حکومت ہے جو لوٹ مار کر رہی ہے جو بندوں کو مروا رہی ہے۔

مسلم لیگ ن والے بگڑے ہوئے لاڈلے ہیں یہ ایسے جج چاہتے ہیں جو ان کے حق میں فیصلے کریں۔

مجھے بچپن سے لے کر آج تک کبھی جرمانہ نہیں ہوا۔

مجھے عدالت نے اس لئیے جرمانہ کیا کہ میں پیش نہیں ہوا میں نے کہا کہ میں نے پارلیمنٹ میں تقریر کی ہے۔

میں جرمانہ ہونے پر بہت ڈیپریس ہوا میں نے عدلیہ بحالی کے لئیے بہت کام کیا۔

میں نے کہا کہ میں تو جرمانہ نہیں دوں گا تو چیف جسٹس نے کہا کہ تو پھر میں ادا کر دوں گا۔

اب اگر مسلم لیگ ن سپریم کورٹ پر حملہ کرے تو جنرل باجوہ کو عدالت کے ساتھ کھڑا ہونا چاہئیے۔

نواز شریف اور مریم نواز کی بڑی خواہش ہے کہ سپریم کورٹ ان کو توہین عدالت کے جرم میں بلائے اور کٹہرے میں کھڑا کرے۔

نواز شریف اور مریم نواز پر پاناما کیس چل رہا ہے وہ چاہتے ہیں کہ لوگوں کی توجہ تبدیل ہو جائے۔

میں نے پہلے دن کہا تھا کہ پاناما کا کیس ان کیمرہ نہیں چلنا چاہئیے جے آٗی ٹی کو اندر کاروائی نہیں کرنی چاہئیے تھی۔

نواز شریف کی ریلی ناکام تھی جب یہ جاتی عمرہ پہنچے تو ان کو عدالت کو نوٹس دینا چاہئیے تھا کہ عدالت میں پیش ہوں۔

عدالت کو نواز شریف اور مریم نواز کو توہین عدالت کا نوٹس نہیں دینا چاہئیے انہیں ان کے مقدمات میں سزا دینی چاہئیے۔

نواز شریف اور مریم نواز چاہتے ہیں کہ اس ملک میں میرے عزیز ہموظنو ہو جائے۔

آج کی فوج ماضی کی فوج نہیں ہے یہ فوج پاکستان کی سلامتی اور نظرئیے کی جنگ لڑ رہی ہے۔

اس فوج نے اگر دہشت گردی کو کمل طور پر ختم نہیں کیا تو اسے بہت نقصان پہنچایا ہے۔

فوج کے جوانوں نے بڑی قربانیاں دی ہیں ان کی لاشیں آئی ہیں ان گھروں میں۔

پی ٹی آئی کے حامد الحق نے کہا کہ

میں سینٹ کا الیکشن دیکھنے کے لئیے گیلری میں بیٹھا تھا اپوزیشن اور مسلم لیگ ن والے نعرے لگا رہے تھے۔

جب سینٹ کے الیکشن کا نتیجہ آ گیا تو میں نے بھی پی ٹی آئی زندہ باد کا نعرہ لگایا تو پیچھے سے کسی نے میرا گلا دبا دیا۔

بعد میں پتہ چلا کہ وہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا بیٹا تھا۔

میں نے بھی وزیراعظم کے ہاتھ پر زور سے کاٹا اور اس کے ہاتھ پر اپنا نشان چھوڑ دیا ہے۔

وزیراعظم نے میرے ساتھ کوئی رابطہ نہیں کیا میں کل چیرمین سینٹ کو شکایت کروں گا۔

http://naeemmalik.wordpress.com/

@ L ��G�