13 June, 2018 23:37


NADEEM MALIK LIVE

www.samaa.tv/videos/NadeemMalik

13-JUNE-2018

میں نے شیخ رشید کے خلاف پانچ سال تک کیس لڑا ہے جبکہ لکھا ہوا ہے کہ چار ماہ میں فیصلہ کرنا ہے۔ مسلم لیگ ن کے شکیل اعوان کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

شیخ رشید کی جتنی زمین ہے اس نے اس میں ایک سو تیرہ کنال کم بتائی ہے۔

شیخ رشید کا بحریہ ٹاؤن میں گھر ہے جس کی مالیت انہوں نے ایک کروڑ بتائی ہے جبکہ بحریہ ٹاؤن کا افسر کہتا ہے کہ اس کی بکنگ پرائس چار کروڑ اسی لاکھ تھی۔

شیخ رشید نے عدالت کو بتایا ہے کہ انہوں نے اپنی پندرہ کنال زمین بحریہ ٹاؤن کو دی تھی اس لئیے انہیں گھر ایک کروڑ روپے کا دیا گیا۔

آج بھی پندرہ کنال زمین شیخ رشید کے نام ہے وہ بحریہ ٹاؤن یا ملک ریاض کے نام نہیں کی گئی۔

شیخ رشید نے عدالت کو بتایا ہے کہ اس سے اپنے اثاثے بتانے میں غلطی ہو گئی تھی۔

شیخ رشید کے خلاف فیصلے کو ستاسی دن تک محفوظ رکھا گیا اور اس کے کاغزات نامزدگی داخل کرنے کے اگلے دن سنایا گیا۔

دوسرے صوبوں کے لوگ کہتے ہیں کہ کاش ان کے پاس بھی کوئی خادم اعلی جیسا لیڈر ہو۔

شیخ رشید کی ضمانت ضبط کروایں گے نہ کروائی تو سیاست چھوڑ دوں گا۔

چائنا میں شہباز شریف کے کام کو پنجاب سپیڈ کہا جاتا ہے۔

میں شیخ رشید کا کیس ہارا نہیں ہوں پپو ایک میں فیل ہوا ہے اور دو میں نتیجے کا انتظار ہے۔

پہلے میں نے کیس کیا تھا کہ شیخ رشید کے اثاثے ہیں اب میں کیس کروں گا کہ یہ اثاثے بنے کیسے ہیں۔

شیخ رشید تین مرلے کے گھر میں رہنے والا شخص آج بائیس ہزار کنال کا مالک ہے۔

شیخ رشید سالانہ صرف تین لاکھ روپے ٹیکس دیتے ہیں۔

پیپلز پارٹی کی شہلا رضا نے کہا

شیخ رشید کے کیس میں بہت زیادہ لوگ سمجھ رہے تھے کہ وہ نا اہل ہو جایں گے۔

مسلم لیگ ن کے ایک لیڈر کو پندرہ ہزار روپے جو غلطی سے ظاہر نہیں کئیے گئے تھے نا اہل قرار دے دیا گیا تھا۔

شیخ رشید کے فیصلے سے مثال قائم ہو گئی ہے کہ غلطی ہو جائے تو معاف ہو جائے گا۔

خارجہ پالیسی کا پارٹی کے منشور میں بتایا جاتا ہے ریٹرننگ آفیسر کا حق نہیں تھا کہ وہ مریم نواز سے خارجہ پالیسی پر سوال کرتا۔

کراچی سے میرے اور عمران خان میں سے کون جیتے گا یہ فیصلہ عوام کریں گے۔

میری خواہش ہے کہ کراچی میں ماضی کی طرح الیکشن نہ ہو کہ جب ٹھپے لگائے جاتے تھے۔

پی ٹی آئی کے شبلی فراز نے کہا کہ

آر او کو کسی پالیسی پر سوال کرنے کا حق نہیں ہے لیڈرز کی ٹی وی پر ڈبیٹ ہونی چاہئیے۔

جج ایک دوسرے سے فیصلے میں اختلارف کرتے ہیں لیکن ایسے نہیں کرنا چاہئیے کہ تاثر جائے کہ بے انصافی ہو رہی ہے۔

عمران خان ایک نیشنل لیڈر ہے وہ پنڈی سے جیتے اس لئیے دوبارہ وہاں نہیں گئے کیونکہ وہ قومی لیڈر ہیں۔

پی ٹی آئی نے کے پی کے میں اتنے کام کئیے ہیں لیکن کہیں عمران خان کا فوٹو نہیں لگایا۔

پی ٹی آئی نے کے پی کے میں بہت کام کئیے ہیں لیکن ان کی مشہوری نہیں کی۔

ایم کیو ایم کے اندرونی مسائل ہیں جو مجھے حل ہوتے دکھائی نہیں دیتے۔

لندن سے الیکشن کے بائیکاٹ کی آوازیں آ رہی ہیں اور کہا جا رہا ہے کہ خواتین کو گھروں سے نہیں نکلنے دینا۔

عمران خان کے کراچی کے آخری جلسے میں ساڑھے چار ہزار کرسیاں تھیں اور وہ بھی نہیں بھر سکی تھیں۔

ہر سیاست دان سے صرف یہ نہیں پوچھیں کہ اثاثے کتنے ہیں یہ بھی پوچھیں کہ وہ بنے کیسے۔

جو سوال ہم نواز شریف سے پوچھ رہے ہیں وہ ہر سیاست دان سے پوچھیں۔

http://naeemmalik.wordpress.com/

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s