6 August, 2018 20:57


NADEEM MALIK LIVE

www.samaa.tv/videos/NadeemMalik

06-AUGUST-2018

اس وقت ملک کی جو اقتصادی حالت ہے اس کے حساب سے ہمیں آئی ایم ایف کے پاس جانا پڑے گا۔ اسد عمر کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

ایسے فیصلے کئے گئے کہ برآمدات پانچ سال پہلے کی نسبت بھی گر گئیں اور یہ پاکستان کی تاریخ میں پہلے بار ہوا ہے۔

ہمارے زر مبادلہ کے زخائر صرف نو ارب رہ گئے ہیں جو چین سے ایک ارب ملنے کے بعد دس ارب

ڈالر ہوئے ہیں۔

آئی ایم ایف کے پاس جانا کوئی واحد راستہ نہیں ہے باقی راستے بھی دیکھیں گے۔

عمران خان اور اسد عمر کو ملک کی اقتصادی حالت کا پہلے سے پتہ تھا کوئی بہانہ نہیں کر سکتے مقابلہ کریں گے۔

اوورسیز پاکستانیوں کو عمران خان پر بہت زیادہ اعتماد ہے ہم کوئی ایسا راستہ اختیار کریں گے کہ ان کا فائدہ بھی ہو جائے اور ملک کا بھی ہو جائے۔

اوور سیز پاکستانیوں کو سرمایہ کاری کے ایسے مواقع دیں گے کہ ان کی رقم محفوظ ہو۔

غیر ملکی بنکوں میں پاکستانیوں کے جو دو سو بلین ڈالرز پڑے ہیں ہو سکتا ہے ان میں سے کچھ جائز بھی ہوں ہم ان کے ساتھ مل کر بیٹھیں گے۔

اگر کسی کے ناجائز پیسے باہر پڑے ہیں تو سب کے خلاف کاروائی ہو گی وہ نواز شریف ہو آصف زرداری، فریا تالپور یا پی ٹی آئی کا کوئی بندہ ہو۔

سب سے پہلے میں اپنے اثاثے سامنے رکھوں گا تا اخلاقی جواز پیدا ہو جائے پھر میں فنانشل اصلاحات لاؤں گا۔

پی ٹی آئی کے بڑے لیڈرز کابینہ کا حصہ ہوں گے۔

گیارہ اگست کو پارلیمنٹ کا اجلاس ہو گا اور بارہ کو وزیراعظم حلف لے گا۔

ہم چودہ اگست کو حلف اٹھانا چاہتے تھے لیکن قانون اس کی اجازت نہیں دیتا۔

یہ بات یقینی ہے کہ عمران خان وزیراعظم ہاؤس میں نہیں رہیں گے۔

وزیراعلی پنجاب کے لئیے نئے اور پرانے دونوں چہرے زیر غور ہیں کے پی کے کے وزیراعلی کا اعلان شاید پہلے ہو جائے۔

شہباز شریف نے صحت تعلیم زراعت کے شعبے میں کچھ نہیں کیا صرف سڑکیں بنائی ہیں۔

شہباز شریف کے خلاف ماڈل ٹاؤن کا کیس آ رہا ہے یہ بہت بڑا طلم ہے چودہ لوگ مارے گئے لیکن کسی کو سزا نہیں ہوئی

قومی اسمبلی کے لئیے ایک سو ستتر ووٹ ہو چکے ہیں پنجاب میں تقریبا ایک سو تریپن یا چون کی تعداد ہو چکی ہے۔

بلوچستان میں بی این پی کے ساتھ تعاون کریں گے تین صوبوں میں انشا اللہ پی ٹی آئی کی حکومت بنے گی۔

پیپلز پارٹی کے ساتھ کسی سطح پر تعاون نہیں ہو گا سیاست میں تعاون ہو سکتا ہے جرم میں نہیں ہو سکتا۔

ایف بی آر میں کرپشن انتہا سے زیادہ بڑھ چکی ہے اسے ختم کرنا ہے۔

ایف بی آر اور کاروباری شخص کا تعلق پولیس اور چور والا بن چکا ہے اسے بہتر کرنا ہے۔

ہمارا موقف ہے کہ ڈالر کا ایکسچینج ریٹ سٹیٹ بنک کو طے کرنا چاہئیے فنانس منسٹری کو نہیں کرنا چاہئیے۔

ہم ویلتھ ٹیکس لگایں گے امیر پر زیادہ لگے گا اور غریب پر خرچ کیا جائے گا۔

عمران خان نے کہا ہے کہ وہ اسمبلی میں ایک گھنٹہ سوالات کا جواب دیا کریں گے۔

http://naeemmalik.wordpress.com/

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s