29 August, 2018 20:56


NADEEM MALIK LIVE

www.samaa.tv/videos/NadeemMalik

29-AUGUST-2018

میڈیا ہو یا کوئی اور ادارہ سب کا کردار آئینی حدود میں رہنا چاہئیے۔ رانا ثنا اللہ کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

میڈیا نے بہت قربانیاں دے کر آزادی حاصل کی ہے۔

ایک زمانے میں لوگ درست خبر کے لئیے بی بی سی کی خبروں پر انحصار کیا کرتے تھے۔

ہم نے فیصلہ کیا تھا کہ حکومت کو تین چار ماہ دینے چاہئییں تا کہ لوگ یہ نہ کہیں کہ یہ بلا وجہ تنقید کر رہے ہیں۔

حکومت نے پنجاب میں ایسے لوگوں کو لگا دیا ہے کہ جو پی ٹی آئی کے ساتھ لمبے عرصے سے منسلک نہیں ہیں۔

عثمان بزدار کے خلاف جو قتل کا الزام ہے اس میں کوئی حقیقت نہیں ہے۔

عثمان بزدار کو وزیراعلی لگا دیا وہ کئی پارٹیاں تبدیل کر چکا ہے۔

مسلم لیگ ن پروٹوکول استعمال کرتی تھی تو پی ٹی آئی اس پر تنقید کرتی تھی۔

حکومت ایسی حرکتیں کر رہی ہے کہ وزیراعظم ہاؤس میں نہیں رہنا اس کا خرچ تو اتنا ہی رہے گا۔

حکومت کی بچت کی سکیم سے کچھ نہیں ہو گا کسی ایک ادارے کو ٹھیک کر دیں اربوں کی بچت ہو جائے گی۔

زرداری کے خلاف کوئی کیس نہیں بنے گا یہ صرف صدر کے الیکشن تک ہے۔

پی ٹی آئی کے ندیم افضل چن نے کہا کہ

سیاسی جماعتوں کو سوشل میڈیا کے استعمال پر اپنے ورکروں سے بات کرنی پڑے گی۔

سیاست دان صالح ضافر ٹائپ صحافت کو پروموٹ کرتے ہیں۔

فیس بک پر بہت سے لوگوں نے جعلی اکاؤنٹ بنائے ہوئے ہیں۔

صحافی بھی صرف صحافت کریں کئی قسم کے صحافی بن چکے ہیں۔

مسلم لیگ ن نے پارٹی تبدیل کرنے کا کوئی کلچر نہیں بنایا انہوں نے اس کا کوئی سد باب نہیں کیا۔

عمران خان ہیلی کاپٹر استعمال کرنے کا اختیار رکھتے ہیں وہ کوئی غلط کام نہیں کر رہے۔

شہباز شریف ہیلی کاپٹر استعمال کرتے تھے ایک وزیر کو ان کے ساتھ لگا دیا جاتا تھا۔

اپوزیشن حکومت کی پالیسیوں پر تنقید کرے ہیلی کاپٹر پر نہ کرے۔

مجھے میڈیا میں کوئی مینوفیکچرنگ ڈیفیکٹ نظر آ رہا ہے۔

حکومت کی بچت کی سکیموں کا مطلب پیغام دینا ہوتا ہے کہ بچت کرنی ہے۔

مسلم لیگ ن نے تمام اداروں کو تباہ کر دیا کوئی ایک ادارہ ایسا نہیں ہے جو آئیڈیل پوزیشن میں ہو۔

پیپلز پارٹی کے نبیل گبول نے کہا کہ

پاکستان کے بہت سے پہلے نمبر کے چینل باقاعدہ پارٹی ہوئے ہیں۔

فیس بک پر ستر فیصد جعلی اکاؤنٹس بنے ہوئے ہیں۔

میں نے بعض چینلز دیکھنے بند کر دئیے ہیں میں ان کو اچھی طرح جانتا ہوں مجھے پتہ ہوتا ہے کہ وہ کیا کہیں گے۔

عثمان بزدار میں یقینا کوئی خصوصیت ہو گی جو عمران خان اور جہانگیر ترین نے اسے وزیراعلی لگا دیا ہے۔

عمران خان دن میں تین بار ہیلی کاپٹر پر بنی گالا کے چکر لگاتے ہیں یہ کاگی مہنگا پڑ جاتا ہے۔

پاکستان کو عالمی طور پر بہت خطرات ہیں میں نہیں سمجھتا کہ پی ٹی آئی والے سمبھال سکیں گے۔

عمران خان کچھ کر کے دکھایں گے تو مانیں گے کہ کوئی تبدیلی آئی ہے۔

پاکستان کے سیاست دانوں اور بیوروکریٹس کے لندن میں ایک سے زیادہ مکان ہیں۔

http://naeemmalik.wordpress.com/

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s